بالی ووڈ اداکار سنجے دت کو آج پونے کی یرواڈہ جیل سے رہا کردیا گیا ۔ انیس سو تریانوے ممبئی بم دھماکوں کے مقدمہ کے سلسلہ میں سنجے دت کو قصوروار قرار دیاگیا تھا۔ چھپن سالہ سنجے دت کو غیر قانونی طریقہ سے ہتھیار رکھنے کے جرم میں اکیس مارچ دو ہزار تیرہ کو پانچ سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ سال دو ہزار سات اور آٹھ کے دوران وہ پہلے ہی اٹھارہ ماہ کی قید کی سزا کاٹ چکے تھے ۔ سنجے دت کی سزا ختم ہونے میں ابھی چند ماہ باقی تھے اور دوران قید اچھے چال چلن کی بنیاد پر ان کی ماباقی سزا معاف کی گئی ۔ مہاراشٹرا کی حکومت نے ان کی سزا میں کمی کی تجویز کو قبول کیا تھا اور وزارت داخلہ کی طرف سے منظوری ملنے کے بعد سنجے دت کی سزا میں جیل مینویل کے تحت کمی کی گئی تھی ۔ اس سے پہلے سنجے دت کی قبل از وقت رہائی کے سلسلہ میں ممبئی کی ایک عدالت میں درخواست بھی داخل کی گئی تھی ۔ درخواست گزار نے سوال کیا تھا کہ آخر کونسے اچھے چال چلن کی وجہ سے سنجے دت کی سزا میں کمی کی گئی ہے ۔ سنجے دت کو ٹاڈا کی عدالت نے چھ سال کی سزا سنائی تھی لیکن سپریم کورٹ نے ان کی سزا کو پانچ سال کردیا تھا ۔ سنجے دت جیسے ہی جیل سے باہر آئے انہوں نے جیل پر لگے ہوئے قومی پرچم کو سیلیوٹ کیا اور زمین کو بوسہ دیا ۔ جیل کے باہر سنجے دت کی اہلیہ مانیاتا دت اور افراد خاندان بھی موجود تھے ۔ بعد میں سنجے دت پونہ سے خصوصی طیارہ کے ذریعہ ممبئی روانہ ہوگئے ۔ دوسری طرف ممبئی میں سنجے دت کے چاہنوں والی کی طرف سے مٹھائیاں تقسیم کی گئیں اور بینڈ باجے کے ساتھ رقص کیا گیا ۔

Post a Comment

 
UA-24837031-1